fbpx

ٹرانسجینڈر بل،طاہر اشرفی بھی خاموش نہ رہ سکے

پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین حافظ طاہر اشرفی بھی ٹرانسجینڈر بل کو دیکھ کر خاموش نہ رہ سکے
حافظ طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ خواجہ سراء اللہ کی مخلوق ہیں ان کو ان کے مکمل حقوق ملنے چاہئے، مذہبی و سیاسی جماعتیں خواجہ سراؤں کے حقوق کی مخالف نہیں مرد و عورت کے خواجہ سراء بننے کے خلاف ہیں ٹرانسجینڈر ایکٹ کے حوالہ سے جمعیت علماء اسلام کی طرف سے تیار کردہ بل و ترامیم کا خیر مقدم کریں گے بل چار سال قبل پاس ہوا حکومت کی طرف سے ترامیم کیلئے کمیٹی بنانے کی تجویز درست سمت قدم ہے

حافظ طاہر اشرفی نے یہ بات علماء و مشائخ سے گفتگو کرتے ہوئے کہی اس موقع پر علامہ عبد الحق مجاہد، مولانا نعمان حاشر ، مولانا محمد شفیع قاسمی ، مولانا طاہر عقیل اعوان، علامہ طاہر الحسن، مولانا محمد اشفاق پتافی، مولانا اسد اللہ فاروق ، علامہ زبیر عابد ، مولانا اسلم صدیقی، مولانا سعد اللہ لدھیانوی ، مولانا عزیز اکبر قاسم اور دیگر بھی موجود تھے ،علامہ طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ پاکستان کا آئین کسی بھی غیر شرعی قانون کی اجازت نہیں دیتا، ٹرانس جینڈر ایکٹ چار سال قبل منظور ہوا جس میں سب کی کوتاہی شامل ہے ٹرانس جینڈر ایکٹ آئین پاکستان اور شریعت اسلامیہ کے خلاف جو ترامیم ہیں ان کے حل کیلئے وزیر قانون نے مشترکہ کمیٹی بنانے کی تجویز دی ہے اس پر عمل ہونا چاہئے

ہم جنس پرستی کے مکروہ ایجنڈے کو آگے بڑھانے کی کوشش شرمناک ہے، تنظیم اسلامی

خواجہ سرا کے ساتھ بازار میں گھناؤنا کام کرنیوالے ملزمان گرفتار

خواجہ سراؤں پر تشدد کی رپورٹنگ کیلئے موبائل ایپ تیار

ہ ٹرانسجینڈر قانون سے معاشرے میں خواجہ سرا افراد کو بنیادی حقوق ملے۔

 پاکستان میں 2018 سے قبل ٹرانسجینڈر قانون نہیں تھا،