دہلی،4 ماہ قبل شادی کرنیوالی شازیہ بیوہ ،مارے جانے کے خوف سے شازیہ برقت اتارنے پر مجبور

0
28

دہلی،4 ماہ قبل شادی کرنیوالی شازیہ بیوہ ،مارے جانے کے خوف سے شازیہ برقت اتارنے پر مجبور

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دہلی میں ہندو انتہا پسندوں کے تشدد سے 24 مسلمان شہید ہو چکے ہیں، ہندو درندوں نے مسلمانوں پر بہیمانہ تشدد کیا، اس دوران گھروں کو بھی لوٹا گیا، خواتین کی بھی بے حرمیت کی گئی

ہندو انتہا پسندوں کے تشدد سے تقریباً 95 فیصد جانی و مالی نقصان مسلمانوں کا ہوا ہے ۔ کئی خواتین بیوہ ہوگئی اور کئی مائیں اپنے نوجوان بیٹوں سے محروم ہوگئی ہیں ۔

دہلی کی رہنے والی 20 سالہ شاذیہ کے ساتھ جو پیش آیا وہ اس کے اور اس کی فیملی کیلئے کسی سانحہ سے کم نہیں ۔ شازیہ کی شادی 4 ماہ قبل ہوئی تھی اور وہ شادی کے بعد دہلی آئی تھی، اب شاذیہ اپنے شوہر کی نعش کی منتظر ہے جسے اترپردیش میں اس کے آبائی علاقے بلند شہر لے جایا جائے گا ۔

شازیہ کا شوہر شاہد ان افراد میں شامل ہے جو شمال مشرقی دہلی میں ہونے والے فسادات میں اپنی جانیں گنوا بیٹھے ۔ 22 سالہ شاہد کے پیٹ میں گولی لگی اور وہ جانبر نہ ہوسکا ۔ شوہر کی موت کے بعد شاذیہ کا رو رو کر برا حال ہے ۔ اس نے کھانا چھوڑدیا ۔ شوہر کے زخمی ہونے کی اطلاع پر وہ ہسپتال پہنچی لیکن شازیہ کا شوہر ہسپتال میں جاں بحق ہو گیا تھا.

ہسپتال جاتے وقت شازیہ نے برقع پہنا تو شازیہ کے جیٹھ نے اس سے برقع اتروا دیا کہ کہیں انتہا پسند مسلمان سمجھ کر مار ہی نہ دیں، شازیہ نے اس ڈر سے برقع اتار دیا حالانکہ وہ اپنے جیٹھ سے بھی پردہ کرتی تھی،

دہلی میں ہندو انتہا پسندوں کی جانب سے متنازعہ شہریت بل کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین پر تشدد کیا گیا، مسلمانوں کے گھر جلائے گئے، مساجد کی بے حرمتی کی گئی اور ایک مسجد کو شہید کیا گیا.مسلمانوں کی املاک کو جلانے اور لوٹنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ مساجد اور درگاہوں کی بھی بے حرمتی کی جا رہی ہے، بھجن پورہ میں مزار کو نذر آتش کیا گیا، اشوک نگر میں مسجد کو آگ لگائی گئی اور مینار پر ہنومان کا جھنڈا بھی لہرا دیا گیا۔

گجرات کا "قصائی” مودی دہلی میں مسلمانوں پر حملے کا ذمہ دار ،بھارت کے اندر سے آوازیں اٹھنے لگیں

دہلی میں پولیس بھی ہندوانتہا پسندوں کی ساتھی، زخمی تڑپتے رہے، پولیس نے ایمبولینس نہ آنے دی

دہلی جل رہا تھا ،کیجریوال سو رہا تھا، مودی سن لے،ظلم و تشدد ہمیں نہیں ہٹا سکتا، شاہین باغ سے خواتین کا اعلان

دہلی میں ظلم کی انتہا، درندوں نے 19 سالہ نوجوان کے سر میں ڈرل مشین سے سوراخ کر دیا

دہلی تشدد ، خاموشی پرطلبا نے کیا کیجریوال کے گھر کا گھیراؤ، پولیس تشدد ،طلبا گرفتار

دہلی میں ایک ماہ کیلئے دفعہ 144 نافذ،مسلمانوں‌ کو گھروں سے نہ نکلنے کی ہدایت

مسلمانوں کے قتل عام پر خاموش،گھر کا گھیراؤ ہونے پرکیجریوال نے کی فوج طلب،مودی نے کیا انکار

ہندو انتہا پسندوں کے تشدد سے 17 افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں جبکہ 250 سے زائد زخمی ہیں، پولیس بھی ہندو انتہا پسندوں کا ساتھ دیتی رہی، ہندو انتہا پسند مسلمانوں کے گھروں میں لوٹ مار بھی کرتے رہے اور انہیں تشدد کا نشانہ بھی بناتے رہے، اس دوران صحافیوں پر بھی حملے کئے گئے،

میڈیا رپورٹس کے مطابق ہندو انتہا پسندوں نے مسلمانوں کے گھروں‌ پر پٹرول بموں سے حملہ کیا،آگ بجھانے کے لئے جانے والی فائر بریگیڈ کی گاڑیوں‌ پر بھی حملہ کیا گیا

دہلی میں منصوبے کے ساتھ حملے کئے گئے، سونیا گاندھی کا انکشاف، کہا امت شاہ دے استعفیٰ

Leave a reply