چینی فوج کے ہاتھوں کرنل سنتوش کی ہلاکت کی خبر سن کر ماں اورچچی بیہوش،ہسپتال منتقل

0
51

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق چین اور بھارت کے مابین لداخ میں کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے، بھارت نے اس بات کو تسلیم کر لیا ہے کہ بھارت کے 20 فوجی اہلکار ہلاک ہوئے ہیں تا ہم غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق بھارت کے 40 سے زائد اہلکار ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ دو درجن سے زائد لاپتہ ہیں ،کچھ کو چینی فوج نے گرفتار کر رکھا ہے جن میں ایک میجر بھی شامل ہے

چینی فوج اور بھارتی فوج کے مابین تصادم میں بھارتی کمانڈنگ افسر کرنل سنتوش بابو بھی ہلاک ہوئے ہیں ، کرنل سنتوش کی ہلاکت کی خبر ملنے پر انکے گھر میں کہرام مچ گیا، کرنل سنتوش تلنگانہ کے علاقے سوریا پیٹ کے رہائشی تھے

کرنل سنتوش ڈیڑھ برس سے سرحد پر تھے،ان کے پسماندگان میں ان کی اہلیہ سنتوشی ، نو سال کی بیٹی ابھینیا اور چار سال کا بیٹا انیرودھ ہے ۔ کرنل سنتوش کی ہلاکت کی خبر جب انکے اہلخانہ کو دی گئی تو کرنل کی والدہ اور چچی بے ہوش ہو گئیں جنہیں فوری علاج کے لئے ہسپتال منتقل کیا گیا

کرنل سنتوش کی والدہ منجولا کی طبیعت زیادہ خراب ہے اور انکی حالت خطرے میں ہے،

کرنل سنتوش نے کوروکونڈا سینک اسکول سے اپنی پڑھائی پوری کی تھی ۔ ان کے والد اپیندر اسٹیٹ بینک میں مینیجر کے عہدہ پر ریٹائرڈ ہوئے ہیں ۔ ستنوش نے 2004 میں بھارتی فوج میں شمولیت اختیار کی تھی اور وہ جموں میں بھی تعینات رہ چکے تھے،

واضح رہے کہ بھارت طویل عرصہ سے چینی سرحد کے قریب غیر قانونی شاہراہ تعمیر کرنے کی کوشش میں ہے، چین سکیورٹی خدشات کے سبب بھارت کو کئی بار متنبہ کر چکا ہے مگر بھارت اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہے جس کے سبب سرحدی جھڑپوں کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ جاری ہے۔

ساڑھے تین ہزار کلومیٹر طویل سرحد پر جوہری طاقت کے حامل دونوں ملکوں کی فوجوں کے درمیان مستقل بنیادوں پر جھڑپیں ہوتی رہتی ہیں، یہاں باقاعدہ طور پر سرحد پر حد بندی نہیں کی گئی لیکن کئی دہائیوں سے یہاں ایک بھی ہلاکت نہیں ہوئی تھی۔

بھارتی فوج کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران زخمی ہونے والے 17 مزید فوجی انتہائی اونچائی پر شدید ٹھنڈ کی وجہ سے زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہوگئے جس کے بعد مرنے والے فوجیوں کی تعداد 20 ہو گئی ہے۔

بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق دونوں ممالک کی فوجیوں کی لڑائی کے بعد چینی لڑاکا ہیلی کاپٹرز نے لائن آف ایکچول کنٹرول (ایل اے سی) پر پروازیں شروع کر دی ہیں۔ جس کے بعد دونوں ممالک میں حالات کشیدہ ہونے کا خطرہ ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے ’دی گارڈین‘ کے مطابق لڑائی کے دوران درجنوں بھارتی فوجی زخمی ہوئے ہیں جن کی حالت تشویشناک ہے۔ بھارتی فوج کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کی طرف سے کشیدگی کو کم کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے، جس کے لیے دونوں اطراف کے فوجی حکام کی جلد ملاقات ہو گی۔

خبر رساں ادارے کے مطابق بھارت کی نمائندگی لیفٹیننٹ جنرل ہریندرا سنگھ کر رہے ہیں جو بھارتی فوج کے 14 ویں کور سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ چین کی نمائندگی میجر جنرل لوئی لِن کر رہے ہیں۔

علاقے میں تعینات بھارتی افسر نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی سے گفتگو کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ یہاں فائرنگ بالکل نہیں ہوئی اور مرنے والے بھارتی افسر کرنل تھے۔ افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ کوئی فائرنگ نہیں کی گئی، کسی قسم کا اسلحہ استعمال نہیں کیا گیا، یہ پرتشدد جھڑپیں ہاتھوں سے ہوئیں۔

بھارتی فوج کا کہنا ہے کہ واقعہ تبت کے عین سامنے واقع لداخ کے علاقے میں وادی گلوان میں پیش آیا,

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ بھارتی فوجیوں نے سرحد عبور کی اور ایل اے سی کی خلاف ورزی کی ، بھارتی فوج کی غیر قانونی سرگرمی پر انہیں روکا گیا لیکن وہ باز نہیں آئے جس پر جھڑپ ہوئی،

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ بھارت ایک طرف مذاکرات چاہتا ہے تو دوسری جانب اسکے فوجی ایل اے سی کی خلاف ورزی کر رہے ہیں،بھارت نے 6 جون کو ہونے والے مذاکرات میں پونے والے اتفاق رائے کی خلاف ورزی کی اور دو بار سرحد عبور کی.

چینی وزارت خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ چین نے بھارت پر زور دیا ہے کہ وہ اتفاق رائے کے مطابق اپنی فرنٹ لائن فوجیوں پر سختی سے پابندی لگائے کہ وہ سرحد عبور نہ کریں اور ایسا کوئی قدم نہ اٹھائیں جس سے سرحدی صورتحال مزید پیچیدہ ہو اور بھارت کے لئے مشکلات ہوں. بھارتی فوج نے معاہدوں کی سنگین خلاف ورزی کی اورغیرقانونی سرگرمیوں کےلئے سرحد کو دو مرتبہ عبور کیا.

واضح رہے کہ چین اور بھارت کے مابین سرحدی تصادم جو 5 مئی کو لداخ میں وادی گلوان اور اس کے بعد شمال مشرقی سکم کے علاقے نکولہ میں شروع ہوا تھا اس کے تین دن بعد بھارت اور چین میں شدید تلخی آئی تھی چین نے لداخ میں بھارتی علاقے میں گھس کر بھارتی فوج کر گرفتار کر لیا تھا جنہیں بعد ازاں چھوڑ دیا گیا

سی پیک کے خلاف امریکی سازش کے توڑ کیلئے چین کے پانچ ہزار فوجی بھارت میں گھس گئے

لداخ میں انڈیا اور چین میں سرحدی کشیدگی، سینئر صحافی مبشر لقمان نے کیا دی تجویز

‏یہ وہ لات ہے جو ایک چینی فوجی نے لداخ میں ایک بھارتی فوجی کو تحفہ میں دی

لداخ میں چین کے ہاتھوں شرمناک شکست پر جنرل بخشی نے ایک سائیڈ کی مونچھیں کٹوا دیں

"پلیز گو بیک چائنہ” بھارتی فوج کے ترلے، بینر اٹھا لیے

جنگ کی تیاری کرو، چینی صدر کا فوج کو حکم

چائنہ نے لداخ کے قریب اپنے ایئر بیس کو مزید پھیلانا شروع کر دیا،جنگی طیارے بھی پہنچا دیئے

لداخ پر پنگے بازی پر چائنہ نے بھارتی فوج کو رگڑ دیا مگر کشمیر پر ہم احتجاج سے آگے نہ بڑھ سکے

مودی سرکار کے عزائم پڑوسی ممالک کیلئے خطرہ بن چکے،وزیراعظم عمران خان

مودی ٹرمپ ٹیلی فونک رابطہ ، بھارت کی چین اور امریکہ کی سیاہ فاموں کے ہاتھوں درگت پر دونوں کا ایک دوسرے سے اظہار یکجہتی

پاکستان کو بات بات پر تڑیاں لگانے والا بھارت ، لداخ پر چینی قبضے کے خلاف تاحال منتوں اور ترلوں کی پالیسی پر عمل پیرا

لداخ میں چائنہ سے شرمناک شکست کے بعد "انڈیا” کا نام بدلنے کی انڈین سپریم کورٹ میں درخواست

بریکنگ،لداخ کشیدگی میں اضافہ،چینی جنگی طیارے بھارتی حدود میں گھس گئے،بھارتی فضائیہ بھی الرٹ

بھارت میں مسلمانوں پر تشدد کرنیوالی آر ایس ایس لداخ پر چین کے ساتھ بہادری کے جوہر کیوں نہیں دکھاتی؟

لداخ سرحدی کشیدگی، مذاکرات سے قبل چین نے ایسا کام کیا کہ مودی سرکار کے ہوش اڑ گئے

لداخ کشیدگی ، پیر سے چائنہ نے انڈیا سے اپنے شہری نکالنا شروع کر دئیے

بھارتی فوجیوں نے غیر قانونی طور پر بارڈر کراس کیا ، اس لیے مارے گئے، چین کا بیان

1975 کے بعد آج چین کے ہاتھوں بھارتی فوجی کی ہلاکت ہوئی ، انڈین آرمی دو بجے پریس کانفرنس کرے گی

لداخ میں تین فوجیوں کی ہلاکت پر بھارتی وزیر دفاع کے فوج کے سربراہان کے ساتھ ہنگامی میٹنگ

لگتا ہے چین نے "گھر میں گھس کر ماریں گے” کی جارحانہ عسکری اپروچ کو ہائی جیک کرلیا ،محبوبہ مفتی

ہلاک ہونیوالے بھارتی فوجیوں کی تعداد بہت زیادہ، تاحال ایک بھارتی میجر چینی فوج کے قبضے میں ہے، دفاعی تجزیہ کار کرنل ر اجے شکلا

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق چین اور بھارت کی فوج کے مابین  کشیدگی جاری ہے،دونوں ممالک نے سرحد کے قریب بھاری تعداد میں اسلحہ،جنگی گاڑیاں پہنچا دی ہیں ، فوجی اڈوں میں فوجیوں کی تعداد میں اضافہ کر دیا ہے.

 

Leave a reply