fbpx

لاہور میں حوا کی دو اور بیٹیاں لٹ گئیں،اغوا کے بعد جنسی زیادتی

لاہور میں حوا کی دو اور بیٹیاں لٹ گئیں،اغوا کے بعد جنسی زیادتی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور میں جنسی زیادتی کے واقعات میں آئے روز مسلسل اضافہ ہو رہا ہے

لاہورکے نواحی علاقے گوجر پورہ میں دو نوجوان لڑکیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کا واقعہ سامنے آیا ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکیوں کو لاہور کے علاقے شاہدرہ سے اغوا کر کے لایا گیا اور ملزمان نے لڑکیوں سے کرول کھاٹی میں واقع فیکٹری میں زیادتی کی پولیس کے مطابق ملزمان لڑکیوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد فرار ہو گئے ہیں جبکہ فیکٹری کے مالک کو گرفتار کر لیا گیا ہے جس سے تحقیقات کی جارہی ہیں

آئی جی پنجاب نے گجرپورہ لاہور میں 2 لڑکیوں کے مبینہ اغوا اور زیادتی کے واقعہ کا نوٹس لیا ہے آئی جی پنجاب نے سی سی پی او لاہور سے واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی آئی جی پنجاب نے سی سی پی او لاہور کو ملزمان جلد از جلد گرفتار کر کے کارروائی کا حکم دے دیا آئی جی پنجاب کا کہنا تھا کہ متاثرہ لڑکیوں کو انصاف کی فراہمی ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنائی جائے،سی سی پی او لاہور کا کہنا ہے کہ گجر پورہ میں 2 لڑکیوں سے مبینہ زیادتی کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے واقعہ میں ملوث دیگر ملزمان کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا،خواتین کے تحفظ کو ہر ممکن یقینی بنایا جائے گا،

لاہور جنسی جرائم کے حوالہ سے گراف مسلسل بڑھتا جا رہا ہے آئے روز جنسی جرائم میں اضافے کی وجہ سے خواتین کا گھروں سے نکلنا محال ہو گیا ہے، پچھلے ایک ہفتے میں کم از کم دس سے زائد جنسی زیادتی کے واقعات لاہور میں رپورٹ ہو چکے ہیں،ایک اور نیا واقعہ سامنے آیا ہے، لاہور کے علاقے گڑھی شاہو میں رکشہ ڈرائیور نے اپنے دوستوں کے ہمراہ بندوق کی نوک پر خاتون کے ساتھ زیادتی کی ہے، پولیس نے خاتون کی درخواست پر مقدمہ درج کر لیا ہے

متاثرہ خاتون نے پولیس کوبتایا کہ رکشہ ڈرائیور اور اس کے ساتھیوں نے نوکری کا جھانسہ دے کربلوایا تھا ملزمان نے دوسال کی بچی پر پستول تان کر میرے ساتھ زیادتی کی ملزم متاثرہ خاتون کو رکشے میں بٹھا کر ناچ گھر گراﺅنڈ لے گیا جہاں اس کے ساتھی موجود تھے اور وہاں ایک ملزم نے بچی چھین کر اسے یرغمال بنایا اور اس کے بعد خاتون کو ملزمان نے اجتماعی طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا پولیس نے واقعہ کا مقدمہ درج کر لیا ہے اور ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے

پنجاب کے دیگر شہروں میں بھی جنسی زیادتی کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے، سمبڑیال اور گجرات میں 2 خواتین کے ساتھ جبکہ سیالکوٹ میں 7 سالہ بچے ،قصور میں جواں سال لڑکے‘ کامونکے میں بیوہ خاتون سے زیادتی کا واقعہ سامنے آیا ہے، سمبڑیال کے علاقہ بھوپالوالہ میں ملزم عدیل نے رات کو دیوار پھلانگ کر گھر میں داخل ہو کر خاتون کو زبردستی رات بھر اپنی ہوس کا نشانہ بنایا۔ گجرات کے مطابق محلہ سلطان پورہ عقب عیدگاہ کی رہائشی خاتون کے گھر پھالیہ کے رہائشی حماد نثار‘ یاسر علی اور وقار حیدر زبردستی گھس آئے۔ حماد نثار نے اسے زبردستی زیادتی کا نشانہ بنایا جبکہ اس کے دوست ڈراتے دھمکاتے رہے۔ تھانہ سول لائن گجرات نے مقدمہ درج کر لیا ہے۔

سیالکوٹ شاہی ٹاؤن کی رہائشی خاتون نے پولیس کو درخواست دی کہ اس کا 7 سالہ بیٹا محلہ کی دکان پر سودا لینے گیا تو اوباش اسامہ اسے زیادتی کا نشانہ بنا کر فرار ہو گیا۔ پولیس مصروف تفتیش ہے۔

لاک ڈاؤن ختم کیا جائے، شوہر کے دن رات ہمبستری سے تنگ خاتون کا مطالبہ

لاک ڈاؤن، فاقوں سے تنگ بھارتی شہریوں نے ترنگے کو پاؤں تلے روند ڈالا

کرونا مریض اہم، شادی پھر بھی ہو سکتی ہے، خاتون ڈاکٹر شادی چھوڑ کر ہسپتال پہنچ گئی

کرونا لاک ڈاؤن، رات میں بچوں نے کیا کام شروع کر دیا؟ والدین ہوئے پریشان

پولیس اہلکار نے لڑکی کو منہ بولی بیٹی بنا کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، نازیبا ویڈیو بھی بنا لیں

نوجوان لڑکی سے چار افراد کی زیادتی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پولیس ان ایکشن

خاتون سے زیادتی اور زبردستی شادی کی کوشش کرنے والا ملزم گرفتار

واش روم استعمال کیا،آرڈر کیوں نہیں دیا؟گلوریا جینز مری کے ملازمین کا حاملہ خاتون پر تشدد،ملزمان گرفتار

کرونا میں مرد کو ہمبستری سے روکنا گناہ یا ثواب

لاہور میں زیادتی کیسز میں مسلسل اضافہ،نوکری کی بہانے خاتون کے ساتھ ہوٹل میں زیادتی

ماں بیٹی سے زیادتی کیس میں اہم پیشرفت سامنے آ گئی

لاہور میں رواں برس جنسی زیادتی کے 369 کیسز، کسی ایک ملزم کو بھی سزا نہ مل سکی