لوٹوں کے سبب مجھے "استحکام پاکستان پارٹی” سے کوئی اُمید نہیں. مبشر لقمان

0
110
Ml

سینئر ٹی وی میزبان مبشر لقمان نے اپنے پروگرام کھرا سچ میں فوزیہ قصوری سے سوال کرتے ہوئے کہا کہ ” یہ جو استحکام پاکستان پارٹی ہے مجھے تو اس سے کوئی زیادہ امید نہیں کیونکہ اکثریت وہی لوگ ہیں جو لوٹے ہیں اور محض بلند آوازوں کیلئے مشہور ہیں، جب کہ یہ کہیں پر بھی چلیں جائیں پارٹی کی وجہ سے جیت سکتے ہیں لیکن اپنے بل بوتے پر نہیں جیت سکتے ہیں.

مبشر لقمان کے سوال کیا یہ لوگ کوئی فرق لاسکیں گے؟ کے جواب میں فوزیہ قصوری نے کہا کہ جب میں پی ٹی آئی میں تھی تو اس وقت جو لوگ محنت سے کام کرتے تھے ان میں جہانگیر ترین اور علیم خان تھے کیونکہ وہ پارٹی کیلئے محنت کرتے تھے، ان کا مزید کہنا تھا کہ مجھے ان لوگوں کا نہیں معلوم کہ وہ کوئی تبدیلی لاسکتے ہیں، پہلے جب پارٹی کے اندر زیادتیاں ہوتی‌ تھیں تو ہم نے آواز بلند کی اور اسی لیے ہمیں پسند نہیں کیا گیا تھا.

اس موقع پر مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ فواد چودھری اپنی ضمانت ضبط کروائے گا جبکہ علی زیدی اور عمران اسماعیل بھی اپنی سیٹ‌ نہیں نکال سکتے ہیں کیونکہ یہ لوگ تحریک انصاف کی سیٹ پر جیتے تھے اور وہ بھی ان لوگوں کو جتوایا گیا تھا، جبکہ اسی طرح کے بہت سارے ایسے لوگ ہیں جن کا اپنے حلقے سے کوئی تعلق نہیں ہے، اس بات پر فوزیہ قصوری نے بھی سینئر اینکر سے اتفاق کیا اور انہوں نے کہا کہ یہ وہ لوگ تھے جنہیں پوری طرح سے نوازا گیا تھا.
مزید یہ بھی بڑھیں؛
لوگ لندن اور امریکہ سے پرتگال کیوں بھاگ رہے ہیں،مبشر لقمان کی پرتگال سے خصوصی ویڈیو
سمندری طوفان :کراچی میں خطرناک صورت حال نہیں،چیف میٹرولوجسٹ
روپے کے مقابلہ میں ڈالر میں کمی
نو مئی کے واقعات میں مبینہ کردار،فیض حمید گھر میں نظر بند
لوگ لندن اورامریکہ سے پرتگال کیوں بھاگ رہے ہیں،مبشر لقمان کی پرتگال سے خصوصی ویڈیو
نومئی کے واقعات،صابر شاکر، معید پیر زادہ پر مقدمہ درج
پی ٹی آئی کی سابق ایم پی اے نے پی پی میں شمولیت اختیار کرلی

فوزیہ قصوری کا کہنا تھا کہ یہ کس قسم کے لوگ ہیں کیونکہ انسان کی آنکھ میں حیا ہوتی ہے لیکن ان کے اندر کوئی شرم و حیا ہے ہی نہیں، ( دراصل ان اشارہ یہاں فواد چودھری کی طرف تھا) کیونکہ کبھی سر پکڑ کر تو کبھی منہ چھپا کر بیٹھے تھے، اب یہاں واضح ہے کہ اللہ کی پکڑ بے نیاز ہے کیونکہ یہ لوگ بڑے بول بولا کرتے تھے لیکن آج منہ چھپا رہے ہیں جبکہ انہوں نے تھوڑا سا بھی صبر نہیں کیا ایک طرف پی ٹی آئی چھوڑی اور پھر دوسری طرف منہ چھپاتے ہوئے دوسرے پارٹی میں جابیٹھے.

Leave a reply