fbpx

سابق صدر حامد کرزئی، عبد اللہ عبداللہ کو طالبان نے نظر بند کردیا

سابق صدر حامد کرزئی اور عبد اللہ عبداللہ کو طالبان نے گھر میں نظر بند کردیا،

روسی خبر رساں ادارے نے دعویٰ کیا ہے کہ افغان طالبان نے سابق صدر حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ کو نظر بند کر دیا ہے تا ہم طالبان ترجمان کی جانب سے ابھی تک اس خبر پر کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا

خبر رساں ادارے کے مطابق حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ کو انکی حفاظت کیلئے ہی گھروں میں نظر بند کیا گیا ہے چند روز قبل کابل پر کنٹرول حاصل کرنے کے بعد طالبان نے حکومت بنانے کے لیے حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ کے ساتھ مذاکرات کیے تھے۔ اس ضمن میں انس حقانی سمیت کئی طالبان رہنماؤں نے حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ سے ملاقاتیں کی تھیں

امریکی میڈیا گروپ سی این این نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان نے سابق افغان صدر حامد کرزئی اور اپوزیشن کے سابق سربراہ عبداللہ عبداللہ سے تمام سکیورٹی چھین لی ہے اور انہیں گھر میں نظر بند کر دیا ہے۔

گزشتہ ہفتے طالبان کے ایک ترجمان نے کہا تھا کہ ان کی تنظیم افغانستان میں ایک جامع حکومت چاہتی ہے۔ تب سے طالبان نے کرزئی اور عبداللہ عبداللہ سے بات کی تھی۔ یہ دونوں رہنما گزشتہ کئی دنوں سے طالبان کے ساتھ مذاکرات کے لیے کابل میں ٹھہرے ہوئے تھے۔

دوسری جانب یہ اطلاعات بھی ہیں کہ طالبان نے حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ کو نظر بند نہیں کیا بلکہ طالبان رہنماؤں سے ملاقات کے بعد حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ دونوں وفود سے ملاقاتیں کر رہے ہیں،کرزئی اور عبداللہ نے افغانستان کی شیعہ علماء کونسل کے ارکان سے آج ملاقات کی ہے ملاقات کے دوران ، انہوں نے افغانستان کی موجودہ صورتحال اور ایک ایسے نظام کے قیام پر تبادلہ خیال کیا جس میں افغانستان کے تمام شہریوں کے حقوق محفوظ ہوں

واضح رہے کہ کابل پر طالبان کا مکمل کنٹرول ہے، طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے پریس کانفرنس میں عالمی دنیا اور افغان قوم کو اہم پیغام دیے، کابل میں حالات زندگی معمول پر ہیں، تعلیمی ادارے، بازار کھلے ہیں، خواتین بھی دفاتر میں کام کر رہی ہیں، طالبان میں اس بار بدلاؤ آیا ہے اور خواتین کو بھی کام کرنے کی اجازت دی گئی ہے، طالبان کی جانب سے کسی قسم کی کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا رہی،کابل سے نمائندہ باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق طالبان نے شہریوں سے گزشتہ روز اسلحہ جمع کیا اور کہا کہ اب حفاظت ہماری ذمہ داری ہے، طالبان نے ریڈیو ،ٹی وی کے دفاتر سمیت مختلف مقامات کا بھی دورہ کیا اور ملازمین سے بات چیت کی،

افغان طالبان کی جانب سے شہریوں کو مسلسل پیغامات دیئے جا رہے ہیں کہ وہ اپنے کام معمول کے مطابق جاری رکھیں، دوسری جانب افغان شہریوں کی جانب سے بھی طالبان کا خیر مقدم کیا جا رہا ہے، افغان شہری طالبان کے ہوتے ہوئے اپنے آپ کو محفوظ تصور کر رہے ہیں

طالبان کی حمایت میں بولنے پر بھارت میں دو مقدمے درج

حامد کرزئی،عبداللہ عبداللہ سے طالبان رہنماؤں کی ملاقات، بڑی یقین دہانی کروا دی

طالبان رہنما متحرک، حامد کرزئی کے بعد گلبدین حکمت یار سے ملاقات

امریکا اور اس کے حواریوں کی طرح بھارت بھی کشمیر سے بھاگے گا، سید علی گیلانی

افغان طالبان کا خواتین سمیت سب شہریوں کو اپنی ملازمتوں پر جانے کی ہدایت

ترکی طالبان کے ساتھ تعاون کے لیے تیار

امریکی سیکریٹری خارجہ کا سعودی وزیر خارجہ سے رابطہ

انتظار کی گھڑیاں ختم، طالبان کا اسلامی حکومت تشکیل دینے کا اعلان

طالبان اب واقعی بدل گئے، کابل کے شہریوں کی رائے

افغانستان میں کیسی حکومت ہونی چاہئے؟ شاہ محمود قریشی کی تجویز سامنے آ گئی

کابل ایئر پورٹ پر ہنگامی صورتحال، طالبان کے کنٹرول کے بعد پہلا نماز جمعہ

افغانستان سے غیر ملکی صحافیوں کا انخلا ،وزیراعظم کی زیر صدارت خصوصی اجلاس

افغان طالبان نے حکومت سازی کے حوالہ سے اہم اعلان کر دیا

مودی افغان طالبان کے سامنے "جھکنے” کو تیار

ملا عبدالغنی برادر نے کابل کی فتح پر مبارکبادی پیغام جاری کر تے ہو ئے کہا ہے کہ ‏افغانستان کی پوری مسلم ملت باالخصوص کابل کے شہریوں کو فتح پر مبارکباد پیش کرتے ہیں اللہ کی مدد و نصرت سے یہ کامیابی حاصل ہوئی ہے اللہ کا ہر وقت عاجزی کے ساتھ شکر ادا کرتے ہیں۔ کسی غرور اور تکبر میں مبتلا نہیں ہیں ملا عبدالغنی برادر نے کابل کی فتح پر مبارکبادی پیغام جاری کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ‏طالبان کا اصل امتحان اور آزمائش اب شروع ہوئی ہے کہ وہ کیسے افغان عوام کی خدمت کرتے ہیں اور دنیا کے لیے ایک ایسی مثال بنتے ہیں، جس کی باقی دنیا پیروی کرے

اس بات کا کوئی ثبوت نہیں کہ اسامہ بن لادن نائن الیون کے حملوں میں ملوث تھا ،ذبیح اللہ مجاہد

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!