کرونا مریضوں کے علاج کیلئے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کو ملی بڑی کامیابی

0
52

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کورونا علاج کے لیے مصنوعی اینٹی باڈیز بنانے میں کامیاب ہو گئی ہے

یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے وائس چانسلر ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا ہے کہ ہیومن ہائیبرڈروما ٹیکنیک کے ذریعے مصنوعی اینٹی باڈیز بنائی جا رہی ہیں،ٹیکنیک کے ذریعے کورونا کے علاج میں پلازمہ کی ضرورت ختم ہو جائے گی یو ایچ ایس نے یونیورسٹی کالج لندن کے اشتراک سے مصنوعی اینٹی باڈیز تیار کی ہے

ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا ہے کہ یو ایچ ایس مصنوعی اینٹی باڈیز بنانے والی ایشیا کی پہلی یونیورسٹی بن گئی،کورونا وائرس ہر گھر، ہر دفتر میں پھیل چکا ہے۔ عید پر بچے کے نئے جوتے خریدنے اور آئسکریم کھانے کے لیے ایس او پیز کی دھجیاں اڑانے کے نتائج ہمارے سامنے ہیں

یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز نے گزشتہ ماہ اینٹی باڈیز کی تیاری پر کام شروع کیا تھا، ڈاکٹرجاوید اکرم کا کہنا ہے کہ مصنوعی اینٹی باڈیز کورونا وائرس کو انسانی پھپھڑوں میں داخل ہونے سے روکیں گی۔ اسی پراجیکٹ پر 1954 میں طب کا نوبیل پرائز دیا جا چکا ہے۔

ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز پہلے ہی کورونا کے مریضوں کا بلڈ پلازما سے علاج شروع کرچکی ہے، ناصرف یہ بلکہ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز نے کورونا وائرس کے لیے آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ شروع کر دیا ہے۔یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کورونا کے علاج کے لیے اسٹیم سیل تھراپی پر بھی کام شروع کرے گی

پاکستان کے معروف ماہر امراض خون ڈاکٹر طاہر شمسی کا کہنا ہے کہ مریض سے مشین کے ذریعے پلازمہ نکالا جاتاہے وینٹی لیٹرز پر جانے والے مریضوں کا پلازمہ نہیں لیاجاسکتا،17لوگوں کو پلازمہ لگ چکا ہے ،سندھ حکومت نے پلازمہ لگانے کی سہولت دے دی، پلازمہ دینے کے لیے مریض کو دیکھنا پڑتا ہے ،پلازمہ کے45سے 50ہزار کے اخراجات آجاتے ہیں ،پلازمہ کے45سے 50ہزار کے اخراجات آجاتے ہیں ،

قبل ازیں کورونا وائرس سے صحت مند ہونے والے افراد کے پلازمہ کے ذریعے کوئٹہ میں بھی مریضوں کا علاج شروع ہوگیا،ڈی جی ہیلتھ بلوچستان ڈاکٹر محمد سلیم ابڑو کے مطابق پلازمہ کولیکشن ریجنل بلڈ سینٹر میں ہوگی طبی پروسیجر مکمل کرکے شیخ زید اسپتال، فاطمہ جناح چیسٹ اسپتال ، و دیگر مخصوص اسپتالوں میں مریضوں کا علاج کیا جائے گا،علاج کے لئے ابتدائی طور پر دو مریضوں کو پلازمہ لگایا گیا دونوں میں مثبت پیشرفت دیکھنے میں آرہی ہے ،پلازمہ کے ذریعے علاج کے لئے طبی ماہرین کی ٹیم کوئٹہ کے مقامی ڈاکٹرز کو بھی ٹرینڈ کرے گی جس کے بعد اس طریقہ علاج کو صوبے بھر میں وسعت دی جائے گی

کوروناکے مریضوں کیلئے سندھ میں پہلی بار کلینیکل ٹرائل پیسیو امیونائزیشن کی اجازت دے دی گئی ,سندھ کی صوبائی وزیر صحت عذراپیچوہو کا کہنا ہے کہ 11مریضوں کے کلینیکل ٹرائل سے خاطرخواہ نتیجہ ملاہے،کلینیکل ٹرائل کیے جانے والے مریضوں میں سے3مریض ایسے تھےجو9 دن میں منفی ہوگئے کلینیکل ٹرائل کیے جانے والے 4 مریض صحت یاب ہو کر گھر چلے گئے،5مریض ری کورہورہے ہیں،صحت میں بہتری آرہی ہے،2 کووینٹی لیٹرکی ضرورت پڑی وہ وینٹی لیٹرزپرہیں،

سندھ کی وزیر صحت کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کسی صوبے میں پہلی مرتبہ تجربہ کیا گیا۔سندھ کے ڈاکٹرز کی کاوشوں سے پیسو امیونائیزیشن کے مثبت نتائج آ رہے ہیں۔ پیسو امیونائزیشن سے بڑی تعداد میں کورونا کے مریضوں کو وینٹی لیٹر پر جانے سے بچایا جا سکے گا، یہ ٹرائل بلڈ ٹرانسفیوژن اتھارٹی کی نگرانی میں ہو رہا ہے، اور مکمل طور پر معیاری ضابطہ کار کے ساتھ اس پر عمل کیا جا رہا ہے۔

صوبائی وزیر صحت کا مزید کہنا تھا کہ پلازمہ لیتے وقت تمام تر اخلاقی پہلوؤں کو بھی مد نظر رکھا گیا ہے، اس سے نہ صرف سندھ بلکہ پورے پاکستان کے عوام کو فائدہ پہنچے گا۔

واضح رہے کہ 30 اپریل کو سندھ حکومت نے ہسپتالوں کو پلازمہ جمع کرنے کی اجازت دی تھی، پاکستان کے معروف ماہر خون ڈاکٹر طاہر شمسی نے کہا ہے کہ جب ہمیں اجازت ملے گی توفوری علاج کرنے کوتیارہوں گے،

ڈاکٹر طاہر شمسی کا مزید کہنا تھا کہ چین نے ایک کام کیا کہ جو لوگ کروناوائرس سے صحتیاب ہوئے ان کے خون سے پلازما نکال کر دوسروے مریضوں کے خون میں انجیکٹ کیا تو خاطر خواہ رزلٹس ملے۔ چین میں ڈاکٹرز نے نے 2 ایم ایل پلازما لگایا تو 2 بار لگانا پڑا اور جسے 6 ایم ایل لگایا تو ایک ہی ڈوز میں مریض صحتیاب ہو گیا تھا،

ڈاکٹر طاہر شمسی کا مزید کہنا تھا کہ ایسے لوگ جن میں کورونا پازیٹیو ہو اور سمپٹمز نہ آئے ہوں جیسے سندھ کے وزیر تعلیم اب صحتیاب ہوئے ہیں تو ان کے خون سے پلازما نکال کر کم از کم 2 لوگوں کو صحتیاب کیا جاسکتا ہے۔ کرونا کا علاج اس طرح مکمن ہے جس طرح چین نے دنیا کو بتایا ہے،پاکستان میں بھی کام فاسٹ ٹریک سے ہو رہا ہے اور امید ہے جلدی اجازت مل جائے گی۔ پاکستان میں 100 کے قریب لوگ ہیں جو صحتیاب ہوئے ہیں ان کے خون سے پلازما نکال کر رکھا جا سکتا ہے۔ مگر اس کے لیے ہمیں حکومت سے اجازت کی ضرورت ہو گی۔

ڈاکٹر طاہر شمسی کا مزید کہنا تھا کہ کورونا کے مریضوں کےعلاج کیلئے تمام حکومتوں سے ملکر کام کریں گے ، پلازمہ ٹیکنیک سے کورونا مریضوں کو آئی سی یو، وینٹی لیٹر کی ضرورت نہیں ہوگی۔ کورونا صحتیاب مریض ہر2 ہفتے بعد پلازمہ عطیہ کرسکیں گے، مریض25 کلو سے کم وزن ہے تو ایک پلازمہ 2لوگوں کو لگایا جاسکے گا۔ وفاق کی جانب سےایک دو روز میں پلازمہ ٹیکنیک پرفیصلہ ہوجائے گا، بلوچستان،کے پی بھی اس حوالے سے اسی ہفتے فیصلہ کرلیں گے جبکہ سندھ اور پنجاب پلازمہ ٹیکنیک سے علاج کیلئے آن بورڈ ہیں۔

ڈاکٹر طاہر شمسی کا مزید کہنا تھا کہ کورونا سے صحت یاب افراد پر ذمہ داری ہے کہ وہ پلازمہ عطیہ کریں، صحتیاب افرادپلازمہ دے کر ڈاکٹرز،پیرامیڈیکل کی صف میں کھڑے ہوسکتےہیں، اب مریضوں کی جان بچانے کیلئے صحت یاب افراد بھی مسیحا بن سکتےہیں۔ کورونا سے صحت یاب افراد سے اپیل ہے پلازمہ دینے کیلئے آگے آئیں، صحت یاب افرادکے بھرپورتعاون سے کورونا کو شکست ہوگی۔ صحت یاب افراد اپنے بھائی بہنوں کی جان بچانے کیلئے آگے آئیں، تمام معاملات طے ہوتے ہی ڈونیشن سینٹرز کا اعلان کریں گے، کوئی ڈونیشن سینٹر نہیں آنا چاہے تو رابطہ کرے، ہم گھر جاکر پلازمہ لیں گے۔

گائے کا پیشاب پینے سے کرونا وائرس ہو گا ختم،ہندو مہاسبھا کے صدر کے علاج پر سب حیران

بھارت میں کرونا کے 44 مریض، مندر میں بتوں کو بھی ماسک پہنا دیئے گئے

کرونا وائرس، بھارت میں 3 کروڑ سے زائد افراد کے بے روزگار ہونے کا خدشہ

بھارتی گلوکارہ میں کرونا ،96 اراکین پارلیمنٹ خوفزدہ،کئی سیاستدانوں گھروں میں محصور

لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر کتنے عرصے کیلئے جانا پڑے گا جیل؟

کرونا وائرس، پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کا مطالبہ، رکن اسمبلی کا بیٹا بھی ووہان میں پھنسا ہوا ہے، قومی اسمبلی میں انکشاف

کرونا وائرس سے کس ملک کے فوج کے جنرل کی ہوئی موت؟

ٹرمپ کی بتائی گئی دوائی سے کرونا کا پہلا مریض صحتیاب، ٹرمپ نے کیا بڑا اعلان

کرونا کیخلاف منصوبہ بندی، پاکستان میں فیصلے کون کررہا ہے

دوسری جانب پنجاب کی صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ پنجاب میں 90 ہزار 69 افرادکےکوروناٹیسٹ کیےگئے، آج لاہور میں تشویشناک مریض 119 اورراولپنڈی میں 116 ہے،کابینہ کمیٹی کی جانب سے سمارٹ سیمپلنگ کے لیے ہمیں کہا گیا تھا،کمیٹی بنائی گئی جس میں بین الاقوامی یونیورسٹیز سے بھی ماہرین شامل کیے گئے،میو اسپتال میں 28 سے 30 وینٹی لیٹرز خالی پڑے ہیںلاہور اورراولپنڈی میں کورونا کےسب سے زیادہ کیسز ہیں،

ڈاکٹر یاسمین راشد کا مزید کہنا تھا کہ لاہورمیں 300سےزائدڈاکٹرکوروناسےمتاثر ہیں پلازمہ کےلیے41 ڈونرزراضی ہوئے، ان کی اسکریننگ کی جارہی ہے لاہور میں کنٹرول روم بنا ہوا ہے ، اعداد و شمار نہیں چھپائے جارہے لاہور میں 21 ہزار سیمپل لینے پر 6 کروڑ روپے خرچا آیا ،اب اسپتالوں میں صرف تشویشناک حالت میں مبتلا مریض رکھے جا رہے ہیں

Leave a reply