fbpx

نواز شریف کو مفرور بھی ڈکلیئر کر دیں تو تب بھی اپیل تو سنی جائے گی،عدالت

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی متفرق درخواستوں پر سماعت ہوئی

نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے کہا کہ احتساب عدالت کے فیصلے کے بعد نواز شریف جیل میں تھے،اسی عدالت نے نواز شریف کو ضمانت دی تھی،اس وقت نواز شریف بیرون ملک علاج کے لئے گئے ہوئے ہیں، جب وہ پاکستان میں تھے تو عدالتوں میں پیش ہوتے رہے،

خواجہ حارث نے کہا کہ سوال تھا کہ کیا مشرف اشتہاری ہوتے ہوئے کوئی درخواست دائر کر سکتےہیں؟ مشرف کیس میں سوال یہ تھا کیا اشتہاری اپنا وکیل مقرر کر سکتا ہے؟ جس پر عدالت نے کہا کہ آپ کی درخواستوں میں تو یہی لکھا ہوا ہے،خواجہ حارث نے کہا کہ میں العزیزیہ کیس میں استثنا نہیں مانگ رہا ہوں ،عدالت نے سوال کیا کہ کیا آپ کے دیے گئے حوالے یہاں قابل قبول ہیں؟یہاں تو ہم ایک کرمنل کیس سن رہے ہیں جس میں آپ استثنا مانگ رہے ہیں،خواجہ حارث نے کہا کہ یہاں تو ہماری درخواست بھی پہلے دائرہوئی،وکیل بھی پہلے موجود ہے، سپریم کورٹ نے ایک کیس میں تو اشتہاری ہوتے ہوئے بھی مشرف کو سنا، جس پر عدالت نے کہا کہ اب وہ غیر معمولی حالات بتا دیں جو آپ سمجھتے ہیں، اس کیس میں لاگو ہوتے ہیں،

خواجہ حارث نے کہا کہ سپریم کورٹ نے مفرور ملزم کی درخواست کو مختلف وجوہات کی بنا پرسنا، نوازشریف کا کیس بھی اس سے ملتا جلتا ہے،نوازشریف نے بھی سزا کے بعد جیل میں قید کاٹی اور اپیل دائر کی، جس پر جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ آپ نے جس کیس کا حوالہ دیا اس میں تو ملزم جیل توڑ کر مفرور ہوا تھا،خواجہ حارث نے کہا کہ یہ تو زیادہ سنگین جرم تھا جس میں مفرور ملزم کی اپیل کا میرٹ پر فیصلہ کیا گیا،عدالت نے کہا کہ جہاں نیب لاء خاموش ہو وہاں ضابطہ فوجداری کا اطلاق ہوتا ہے

جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ آپ نے جن کیسسز کا حوالہ دیا وہ یہی کہتے ہیں کہ میرٹ پر چلنا ہے، اس عدالت نے میرٹ پر ہی چلنا ہے،

خواجہ حارث نے کہا کہ بتانا چاہتا ہوں کہ نواز شریف فی الحال عدالت میں پیش نہیں ہو سکتے،جس پر عدالت نے کہا کہ آپ چاہتے ہیں کہ اپیلوں پر سماعت ملتوی کر دی جائے، یا پھرنواز شریف کی غیر موجودگی میں ان پر سماعت کر لی جائے، خواجہ حارث نے کہا کہ میری عدالت سے یہی استدعا ہے، عدالت نے کہا کہ اگر ہم نواز شریف کو مفرور بھی ڈکلیئر کر دیں تو تب بھی اپیل تو سنی جائے گی،

نیب کی نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کی مخالفت،عدالت نے بڑا حکم دے دیا

نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کیوں نہیں کی؟ راجہ بشارت نے کیا اہم انکشاف

مریم نواز اور کیپٹن ر صفدر میں ہونے لگی ہے جلد جدائی،خبر سے کھلبلی مچ گئی

مریم نواز ایک بار پھر "امید” سے، کیپٹن ر صفدرخوشی سے نہال

مریم نواز عدالت پہنچ گئی، بہارہ کہو میں کارکنان نے کیا استقبال

عدالت پہنچنے پر مریم نواز نے کارکنان کے لئے جاری کیا حکم،ن لیگی رہنماؤں کو روک دیا گیا

میری ضد ہو گی کہ نواز شریف یہ کام کریں، مریم نواز کی غیر رسمی گفتگو

نواز شریف ضمانت پر نہیں، وکیل کا عدالت میں اعتراف،ہمیں سزا معطلی سے متعلق بتائیں، عدالت

نواز شریف کے لندن ڈاکٹر کی رپورٹ باغی ٹی وی نے حاصل کر لی

نواز شریف کو سرنڈر کرنا ہو گا، اگر ایسا نہ کیا تو پھر…عدالت کے اہم ریمارکس

نواز شریف حاضر ہو، اسلام آباد ہائیکورٹ نے طلبی کی تاریخ دے دی

نواز شریف کی نئی میڈیکل رپورٹ عدالت میں جمع، نواز ذہنی دباؤ کا شکار،جہاز کا سفر خطرناک قرار

جس ڈاکٹر کا سرٹیفیکٹ لگایا وہ امریکہ میں اور نواز شریف لندن میں،عدالت کے ریمارکس

اشتہاری ملزم کی درخواستیں کس قانون کے تحت سن سکتے ہیں،نواز شریف کے وکیل سے دلائل طلب

نواز شریف کی جیل میں طبیعت کیوں خراب ہوئی تھی؟ نئی میڈیکل رپورٹ میں اہم انکشاف

نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کے دلائل مکمل ہو گئے،ایڈیشنل پراسیکوٹر نیب جہانزیب بھروانہ کے دلائل شروع ہو گئے،ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل نے عدالت میں کہا کہ عدالت نے نواز شریف کو سرنڈر کرنے کا حکم دیا،نواز شریف کی دائر درخواستیں ناقابل سماعت ہیں، جس پر عدالت نے کہا کہ العزیزیہ ریفرنس میں نواز شریف کی ضمانت ختم ہو چکی ہے،یہ تسلیم شدہ حقیقت ہے کہ نواز شریف عدالت میں پیش نہیں ہوئے،

اشتہاری مجرم کی ضمانت منسوخی کی ضرورت ہے؟ نواز شریف کیس میں عدالت کے ریمارکس