بیرون ملک سے پاکستانیوں کو واپس لانے کے لئے پی آئی اے کا بڑا فیصلہ

بیرون ملک سے پاکستانیوں کو واپس لانے کے لئے پی آئی اے کا بڑا فیصلہ

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق  کرونا وائرس کی وجہ سے دنیا کے کئی ممالک میں فضائی آپریشن بند ہے، پاکستان نے بھی فضائی آپریشن بند کیا جس کی وجہ سے کئی پاکستانی بیرون ممالک میں پھنسے ہوئے ہیں اور وطن واپس آنے کی اپیلیں کر رہے ہیں ، ایسے میں پاکستان کی قومی ایئر لائن پی آئی اے اپنے ہم وطنوں کو واپس لانے کے لئے کوشاں ہے

اگرچہ پاکستان نے اندرون ملک اور بین الاقوامی فضائی آپریشن معطل کر رکھا ہے لیکن پاکستانی شہریوں کو واپس لانے کے لئے پی آئی اے خصوصی پروازیں چلا رہی ہے.اب سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے پی آئی اے کو خصوصی پروازوں کی اجازت کا نوٹم جاری کردیا گیا ہے

ترجمان پی آئی اے کے مطابق پی آئی اے 17 اور 18 اپریل کو مانچسٹر کیلئے اسلام آباد سے پروازیں چلائے گا ،17اپریل کو2پروازیں پی کے 8852اور 8894اسلام آبادسےسیول روانہ ہوں گی ،18اپریل کو پی آئی اے کی خصوصی پرواز کراچی سے جکارتہ کیلئے روانہ ہو گی، 18اپریل کو خصوصی پرواز پی کے 8889 جکارتہ میں پھنسے پاکستانیوں کو وطن واپس لائےگی،

ترجمان پی آئی اے کے مطابق ٹورنٹو کیلئے15اور19اپریل کو اسلام آباد اور کراچی سے پروازیں روانہ ہوں گی،17اپریل کو پی آئی اے کا خصوصی طیارہ دبئی میں پھنسے پاکستانیوں کو وطن واپس لائےگا .

کرونا وائرس،بھارت میں اتنے مریض ہو جائیں گے کہ لاشیں بلڈوزر سے گڑھے میں ڈالنا پڑیں گی

چین میں‌ کرونا وائرس کا پہلا مریض اب کس حال میں ہے ؟

قبل ازیں سول ایوی ایشن اتھارٹی نے کورونا وائرس کے تدارک کے پیش نظر بیرون ملک سے آنے والے مسافروں کے لئے نئی ٹریول ایڈوائزری جاری کی۔ پاکستانیوں کے لیے گائیڈ لائنز میں اس بات کا پابند بنایا گیا ہے کہ پاکستان پہنچنے پر مسافر کو سرکاری قرنطینہ میں رہنا ہے یا خود کسی مقام پر ادائیگی کر کے قرنطینہ ہونا ہے اس متعلق پرواز سے پہلے ائیرلائن کو آگاہ کرنا لازمی ہو گا۔

کرونا کے وار جاری، 288 پولیس اہلکاروں میں ہوئی کرونا کی تشخیص

سعودی عرب میں کرونا کے مریضوں میں مسلسل اضافہ، شاہ سلمان نے دیا عالمی ادارہ صحت کو فنڈ

پی آئی اے کی مالی مشکلات، سی ای او ارشد ملک اور افسران کا بڑا فیصلہ

پالپا کا پروازوں کو آپریٹ کرنے سے انکار،اصل کہانی کیا ؟ جان کر لگے بڑا جھٹکا

کرونا کیخلاف جنگ،پروازیں آپریٹ نہ کرنیوالوں کے خلاف کیا ایکشن لیا جائے؟ بڑا مطالبہ آ گیا

طیارے کے عملے کیلیے بھی سرکاری یا کسی اور جگہ قرنطینہ ہونے کی آپشن کی سہولت ہو گی، سرکاری یا دیگر قرنطینہ ہونے سے متعلق ائیر لائن اور ائیرپورٹ عملے کو پرواز کی لینڈنگ سے چوبیس گھنٹے پہلے بتانا لازمی ہو گا۔ بیرون ملک سے آنے والے مسافروں کو 7 یوم کیلئے قرنطینہ کیا جائے گا اور سرکاری بسوں میں ائیرپورٹ سے قرنطینہ پہنچایا جائے گا۔ قرنطینہ اور ائیرپورٹ پر کوئی عزیز یا رشتہ دار مسافر سے نہیں مل سکے گا، بین الاقوامی پرواز سے آنے والے مسافر اور کریو کا پہلے دن قرنطینہ میں سواب ٹیسٹ ہوگا۔

قرنطینہ میں ہی چھٹے روز مسافر اور کا دوبارہ سواب ٹیسٹ ہوگا، ساتویں دن ٹیسٹ مثبت آنے مسافر اور کریو کو اسپتال جبکہ منفی ٹیسٹ والوں کو گھر بھجوا دیا جائے گا۔ سات دن بعد گھر وں کو جانے والے تمام مسافروں اور کریو کا مکمل ذاتی ڈیٹا بھی ریکارڈ میں رکھا جائے گا جب کہ رپورٹ منفی آنےپربھی لازم ہوگامسافر یا عملہ گھر میں7دن خودکوآئسولیٹ کرے.

واضح رہے کہ کرونا وائرس کی وجہ سے اندرون ملک اور بین الاقوامی پروازوں پر عائد پابندی میں توسیع کر دی گئی ہے، ترجمان ایوی ایشن ڈویژن کے مطابق پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی نے پابندی میں توسیع کا نوٹم جاری کردیا،21 اپریل تک ملک میں ڈومیسٹک اور انٹرنیشنل فلائٹ آپریشن معطل رہے گا اس سے پہلے فلائٹ آپریشن پر 14 اپریل تک پابندی عائد کی گئی تھی، سی اے اے نے پاکستان میں کام کرنے والی تمام فضائی کمپنیوں کا آگاہ کردیا

جاری نوٹم میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ بالا معطلی کا اطلاق کارگو اور خصوصی پروازوں پر نہیں ہوگا جن کو منظوری خصوصی اجازت کے تحت ہوں گے

راشن نہیں چاہئے، ہمیں پاکستان واپس بھجواؤ، یو اے ای میں پھنسے پاکستانیوں کا احتجاج

بیرون ملک پھنسے پاکستانیوں کو واپس لانے کیلئے پی آئی اے کوشاں

ملک بھر کے تمام فلائنگ کلب کے طیاروں پر پابندی عائد کر دی گئی،تمام وزرائے اعلیٰ کے چارٹر طیاروں اور ہیلی کاپٹرز کو بھی خصوصی اجازت درکار ہوگی ،فلائینگ کلب کے چھوٹے طیاروں کو بھی اڑنے کی اجازت نہیں ہو گی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.