ورلڈ ہیڈر ایڈ

بھارت کی ایک اور جھوٹی کہانی بے نقاب، ڈی جی آئی ایس پی آر نے کی باغی ٹی وی کی خبر کی تصدیق

بھارت کی ایک اور جھوٹی کہانی بے نقاب، ڈی جی آئی ایس پی آر نے کی باغی ٹی وی کی خبر کی تصدیقمودی سرکار کی ایک اور جھوٹی کہانی بے نقاب ہوگئی۔ بھارتی فوج اور میڈیا نے لائن آف کنٹرول پر 21 اگست کو 2 عسکریت پسند پکڑنے کا جھوٹا دعویٰ کیا۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ 21 اگست کو حاجی پیر سیکٹر میں 2 کسان غلطی سے لائن آف کنٹرول کراس کر گئے تھے، لائن آف کنٹرول عبور کرنے والوں میں 21 سالہ محمد ناظم اور 30 سالہ خلیل احمد شامل ہیں، اپنے علاقے میں گھاس کاٹتے ہوئے وہ غلطی سے ایل او سی کراس کر گئے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ 27 اگست کو پاکستان اور بھارت کے حکام کے مابین ہاٹ لائن پر اس معاملے پر بات کی گئی تھی، بھارتی حکام نے معمول کی قانونی کارروائی کے بعد جواب دینے کا کہا تھا، تا ہم 2 ستمبر کو بھارتی میڈیا نے جھوٹا پراپیگنڈہ کرتے ہوئے ان دونوں افراد کو کالعدم تنظیموں کے رکن قرار دیا۔

 

گھاس کاٹنے والوں کوبھارت نے عسکریت پسند بتایا، بھارت کا ایک اور جھوٹ بے نقاب

واضح رہے کہ باغی ٹی وی یہ خبر پانچ ستمبر کو لگا چکا تھا جس میں بھارتی میڈیا اور بھارتی فوج کے پروپیگنڈے کو بے نقاب کیا گیا تھا،

باغی ٹی وی نے اپنی خبر میں کہا تھا کہ بھارت کا ایک اور جھوٹ بے نقاب ہو گیا، لشکر طیبہ کے دو اراکین کو گرفتار کرکے میڈیا کے سامنے پیش کیا تو حقیقت سامنے آ گئی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بھارتی فوج کے آفیسر نے گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر میں پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ ہم نے لشکر طیبہ کو دو عسکریت پسندوں کو گرفتار کیا ہے جنہیں پاکستان نے بھیجا ہے تاہم جب بھارتی میڈیا میں خبریں نشر ہوئیں تو معلوم ہوا کہ دونوں نوجوانوں کا تعلق آزاد کشمیر سے ہے اور وہ گھر سے گھاس کاٹنے کے لئے نکلے تھے واپس نہیں آئے، انہیں بھارت سرکار نے گرفتار کر کے میڈیا کے سامنے پیش کر کے لشکر طیبہ سے تعلق جوڑ‌کر پروپیگنڈہ کرنا شروع کر دیا،

دونوں نوجوان تعظیم کھوکھر اور خلیل کیانی گزشتہ ایک ماہ سے لاپتہ تھے، ضلع حویلی میں دونوں نوجوانوں کے اہل خانہ نے گفتگو کے دوران کسی بھی عسکری تنظیم سے ان کے تعلق کی تردید کرتے ہوئےکہا کہ وہ ایل او سی کے قریبی علاقے کے رہائشی مزدور ہیں، وہ 21 اگست کو گھاس کاٹنے گئے مگر واپس نہیں لوٹے ۔ انہیں خدشہ تھا کہ وہ غلطی سے ایل او سی عبور یا پھر بھارتی فوج کا نشانہ بن گئے ۔

کشمیریوں کے ساتھ کھڑے تھے ،ہیں اور رہیں گے، پاک فوج کا کشمیریوں‌ کو پیغام

بھارت سن لے، جنگیں اسلحہ سے نہیں جذبہ حب الوطنی سے لڑی جاتی ہیں، ترجمان پاک فوج

‏اسرائیل کو تسلیم کرنے سے متعلق باتیں پروپیگنڈا ہے. ڈی جی آئی ایس پی آر

یہ سوچ بھی کیسے سکتے ہیں کہ کشمیر پر کسی قسم کی کوئی ڈیل ہوئی، ڈی جی آئی ایس پی آر

آزادکشمیر کی پولیس کے مطابق دونوں نوجوانوں کی گمشدگی کی رپورٹ خورشید آباد پولیس چوکی میں درج ہے ، ان کی تلاش میں پاکستانی فوج نے بھی مقامی لوگوں اور پولیس کی مدد کی تھی مگر ان کا کوئی سراغ نہ ملا .

دونوں لاپتہ کشمیری نوجوانوں کو بھارت سرکار نے گرفتار کر کے پاکستان کے خلاف پرویگنڈہ کیا تاہم اب حقیقت سامنے آ گئی ہے، بھارت نے ماضی کی طرح اب بھی جھوٹ بولا اور گھاس کاٹنے کے لئے جانے والوں کو گرفتار کر کے لشکر طیبہ سے تعلق جوڑ دیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.